خاندانی منصوبہ بندی کی خدمات کو فروغ دینے والی مرد نرس پاکستانی معاشرتی اصولوں کو تبدیل کرنے میں مدد کرتی ہے

اپریل 27, 2023

تحریر: ایمن ہارون اور ڈاکٹر طاہرہ سحر

خاندانی منصوبہ بندی کی خدمات کو فروغ دینے والی مرد نرس پاکستانی معاشرتی اصولوں کو تبدیل کرنے میں مدد کرتی ہے

اپریل 27, 2023

تحریر: ایمن ہارون اور ڈاکٹر طاہرہ سحر

مختیار حسین (بائیں) ایک مرد نرس ہیں جو کراچی ڈویژن کے ضلع شرقی میں ایک سرکاری ڈسپنسری میں کام کرتے ہیں۔

خاندانی منصوبہ بندی ایک ایسا موضوع ہے جسے پاکستانی معاشرے میں طویل عرصے سے ممنوع سمجھا جاتا ہے۔ تاہم، خاندانی منصوبہ بندی کے بارے میں عوام میں آگاہی اور قبولیت بڑھ رہی ہے اور مرد نرسیں خاندانی منصوبہ بندی کے طریقوں کو فروغ دینے اور خدمات کی فراہمی میں ایک بااثر قوت بن رہی ہیں۔

مختیار حسین ایک مرد نرس ہیں جو کراچی ڈویژن کے ضلع شرقی میں ایک سرکاری ڈسپنسری میں کام کرتی ہیں۔ وہ ایک تربیت یافتہ اور تجربہ کار فیملی پلاننگ کاؤنسلر ہیں جنہوں نے 10 سال تک اس شعبے میں کام کیا ہے۔ 

حسین کو حال ہی میں موصول ہوا ملازمت کے دوران تربیت مانع حمل پیوند کاری میں ڈاکٹر سلمیٰ رشید (سہولت انچارج) سے مانع حمل امپلانٹ شامل کیا گیا تھا، جنہیں فیملی پلاننگ سروس کی فراہمی میں تربیت دی گئی تھی۔ The Challenge Initiative (TCI). اس تربیت نے حسین کے اعتماد میں اضافہ کیا اور ان کی صلاحیتوں کو بہتر بنایا، اور اب وہ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ امپلانٹ داخل کرنا ، خاندانی منصوبہ بندی کا ایک طریقہ جس میں اوپری بازو کی جلد کے نیچے ایک چھوٹی ، لچکدار چھڑی ڈالنا شامل ہے۔ چھڑی ایسے ہارمونز جاری کرتی ہے جو تین سال تک حمل کو روکتے ہیں۔   

بہت سے گاہک اس طریقہ کار میں دلچسپی رکھتے ہیں کیونکہ یہ حمل کو روکنے کا ایک طویل مدتی اور مؤثر طریقہ ہے. تاہم، کچھ خواتین نے ایک مرد نرس کے ذریعہ انجام دیئے جانے والے عمل کے بارے میں تشویش کا اظہار کیا ہے. وہ اس بارے میں فکرمند ہیں کہ اگر انہیں اس طرح کے عمل کے لئے کسی مرد نرس کے پاس جاتے ہوئے دیکھا گیا تو انہیں کس معاشرتی بدنامی اور رد عمل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔  

ان خدشات کے باوجود، حسین نے کہا کہ ان کے مریض امپلانٹ داخل کرنے کے لئے ایک مرد نرس کے خیال کو قبول کرتے ہیں اور اس کے لئے تیار ہیں. انہیں کمیونٹی اور ان کے ساتھیوں کی طرف سے بھی مثبت رائے ملی ہے ، جو قابل رسائی اور جامع خاندانی منصوبہ بندی کی خدمات فراہم کرنے کی اہمیت کو تسلیم کرتے ہیں۔  

خاندانی منصوبہ بندی کے لئے امپلانٹ داخل کرنے والے مرد نرسوں کو قبول کرنا پاکستانی ثقافت میں ایک اہم قدم ہے ، جہاں صنفی کردار وں کی اکثر سختی سے وضاحت کی جاتی ہے۔ حسین کے کہانی پاکستانی معاشرے میں خاندانی منصوبہ بندی کے بارے میں بدلتے ہوئے رویوں پر روشنی ڈالتی ہے۔ اس سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ مرد نرسیں آگاہی بڑھانے اور خاندانی منصوبہ بندی کی خدمات فراہم کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔

حالیہ خبریں

سانحے سے وکالت تک: تنزانیہ میں زچگی کے بعد خاندانی منصوبہ بندی کو تبدیل کرنے کے لئے ایک نرس کا مشن

سانحے سے وکالت تک: تنزانیہ میں زچگی کے بعد خاندانی منصوبہ بندی کو تبدیل کرنے کے لئے ایک نرس کا مشن

TCI بہتر اعداد و شمار جمع کرنے اور کمیونٹی ایکشن کے ساتھ نوعمر حمل کا مقابلہ کرنے کے لئے فلپائن کے کاگیان ڈی اورو میں شہر کی قیادت میں کوششوں کی حمایت کرتا ہے

TCI بہتر اعداد و شمار جمع کرنے اور کمیونٹی ایکشن کے ساتھ نوعمر حمل کا مقابلہ کرنے کے لئے فلپائن کے کاگیان ڈی اورو میں شہر کی قیادت میں کوششوں کی حمایت کرتا ہے

TCIتازہ ترین اینیمیٹڈ ویڈیو میں فرانکوفون مغربی افریقہ کی یونیورسل ریفرل مداخلت کو نافذ کرنے کا طریقہ دکھایا گیا ہے

TCIتازہ ترین اینیمیٹڈ ویڈیو میں فرانکوفون مغربی افریقہ کی یونیورسل ریفرل مداخلت کو نافذ کرنے کا طریقہ دکھایا گیا ہے

TCIنائجیریا میں ای ڈیٹا کوالٹی اسسمنٹ ٹول ایف پی ڈیٹا کے معیار کو بہتر بنانے کے لئے گیم چینجر ہے

TCIنائجیریا میں ای ڈیٹا کوالٹی اسسمنٹ ٹول ایف پی ڈیٹا کے معیار کو بہتر بنانے کے لئے گیم چینجر ہے

بورنو ریاست میں کمیونٹی ہیلتھ ایکسٹینشن ورکر خاندانی منصوبہ بندی کے اعداد و شمار کی دستاویزات کو بہتر بنا کر اپنے اثر کو بڑھاتا ہے

بورنو ریاست میں کمیونٹی ہیلتھ ایکسٹینشن ورکر خاندانی منصوبہ بندی کے اعداد و شمار کی دستاویزات کو بہتر بنا کر اپنے اثر کو بڑھاتا ہے